اوزون کو تباہ کرنے والے ممنوعہ کیمیائی مادوں کے اخراج کا سراغ مل گیا ہے

Climate Change

سیول : چائنا نے ایک بار پھر ایک دہائی پہلے بند کی جانے والی گئس CFC-11 کو پیدا کرنا شروع کردیا ہے۔ اس گئس کا نکالنا بین القوامی معاہدے کی خلاف ورزی ہے۔ جنوبی کوریا اور جپان کے ماھرین نے پتا لگایا ہے کہ 2014 سے 2017 تک ایک سال میں 7000 میٹرک ٹن سے زیادہ  کلورو فلورو کاربان کا اخراج کیا گیا ہے۔

CFC-11 کا اخراج تعمیرات میں ہونے والے مشینوں، ریفریجریٹر اور صارفی مصنوعات سے کیا جاتا ہے ، لیکن اس سے نکلنے والےمالیکیولس جس میں کلورین جس کو مجموئی طور پر کلوروفلورو کاربان کہا جاتا ہے۔ ماھرین کا کہنا ہے کہ ایک کلورین کا مالیکیول  ماحول  کے ھزاروں اوزوں مالیکیولس کو تباہ کر سکتا ہے۔

یاد رہے کہ اوزوں کا تھ ھماری زمیں کو الٹراوایولیٹ ریڈیئشن سے بچاتی ہے اور ان الٹراوایولیٹ شعائوں کے زمین تک گرنے سے انسان کی اسکن خراب ہو جائے گی اور اسکن کینسر کے خدشات بڑہ جائیں گے۔

 گذرنے والے دہائی مین  CFC کی کمی کی وجہ سے انٹارکٹیکا کے اوپر اوزوں والا ہول سکڑتا جا رہا ہے جس کے بارے میں کہا جا رہا ہے کہ 2060 اور 2070 کے درمیان بند ہونے کی توقع ہے۔