دہلی میں رہنا کتنا خطرناک ہو سکتا ہے۔

Climate Change
Air pollution

آئی کیو ایئر ویزیوئل (IQ Air Visual) کی رپورٹ کے مطابق جنوبی ایشیا کے بیشتر شہر فضائی آلودگی سے نبرد آزما ہیں۔
گزشتہ بدہ 30 اکتوبر کو دہلی 422 کی ایئر کوالٹی انڈیکس(AQI) کی شرح کے مطابق دنیا کا سب سے آلودہ شہر بن گیا، جو دوسرے دن تقریبا 540 کی شرح تک پہنچ گیا تھا جو بہت ہی خطرناک حد ہوتی ہے ، اس کے علاوہ بتایا جا رہا ہے کہ انڈیا کے کچھ اضلاع میں AQI کی شرح 600 سے زیادہ ہو گئی تھی۔
یاد رہے کہ یہ انڈیکس پوری دنیا میں شہروں کی فضائی معیار کو AQI live tracking سے پیمائش کرتا ہے ۔ AQI اپنی رینکنگ میں ان پانچ اہم آلودگیوں کو مدنظر رکھتا ہے۔ جس میں 10 مائکرو میٹر سے کم سائز کے مالیکیولس، PM2.5 ، اوزون (O3) ، نائٹروجن آکسائیڈ (NO2) اور کاربان مونوآکسائیڈ (CO) شامل ہیں۔
ٹریک کردہ اعداد و شمار کو AQI ان سات اقسام میں ہوا کے معیار کا تعین کرتا ہے۔
0-50: Good
51-100: Satisfactory
101-200: Moderate
201-300: Poor
301-300: Very Poor
401-500: Severe
500 and above: ‘Severe-plus emergency’
رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ اگلے کچھ دنوں کے لیے ان شہروں میں رہنے والے ھر ایک شخص کو بیرونی سرگرمیوں سے گریز کرنا چاہیے کیوں کہ آنے والے کچھ دن زیادہ خطرناک ثابت ہو سکتے ہیں۔
نئی دہلی کے علاوہ کچھ اور دوسرے ایشیائی شہر جس میں لاہور بھی سرفھرست ہے جو آنے والے کچھ دنوں میں شدید فضائی آلودگی کی لپیٹ میں ہونگے۔

AQI index of polluted cities
AQI index of polluted cities

جب کہ اس بار پنجاب حکومت نے سموگ سمیت ماحولیاتی آلودگی سے نمٹنے اور صاف ستھرے ماحول کو یقینی بنانے کے لیے 273 ملین ڈالر کی لاگت سے پنجاب گرین ڈویلپمنٹ پروگرام کا بھی آغاز کیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ صوبے میں فصلوں کی باقیات جلانے پر پابندی عائد کردی گئی ہے اور ہوا کے معیار کی نگرانی کےلیے چھ مانیٹرنگ اسٹیشن اور 15 واٹر کوالٹی مانیٹرنگ اسٹیشن بھی قائم کیئے جائیں گے ۔