کورونا وائرس سے ہلاکتوں کی تعداد پانچ ہزار کے قریب پہنچ گئی

Health and Medicine
Coronavirus Outbreak Updates

عالمی ادارہ صحت کے سربراہ ڈاکٹر ٹیڈروس ادہانوم گیبریاس نے کورونا وائرس کو اب ایک عالمی وبا کا نام دے دیا ہے۔

دنیا بھر میں 129,000 سے زیادہ کیس رپورٹ ہوچکے ہیں، اور 4700 سے زیادہ افراد ہلاک ہوگئے ہیں اور ان متاثرہ افراد میں سے 68000 کے قریب لوگ صحتیاب ہوچکے ہیں۔

اس وقت سب سے زیادہ متاثرین کی تعداد چین سے ہے، عالمی ادارہ صحت کے رپورٹس کے مطابق چین میں کل 80796 متاثرین ہیں جس میں 3159 کی اموات واقع ہوئی ہے اور جب کہ 62829 متاثرین رکور ہوگئے ہیں۔

جب کہ دوسرے نمبر پر اٹلی ہے، اس وقت اٹلی میں کل متاثرین کی تعداد 12462 ہے جس میں 827 اموات واقع ہوئی ہے اور 1045 متاثرین صحتیاب ہوگئے ہیں۔

تیسرے نمبر پر ایران ہے، ایران میں ٹوٹل متاثرین کی تعداد 10075 ہے جس میں 429 کی اموات واقع ہوئی ہے اور 3276 صحتیاب ہوگئے ہیں۔

اور چھوتھے نمبر پر جنوبی کوریا ہے، جنوبی کوریا میں متاثرین کی تعداد 7869 ہے جب کہ 66 اموات واقع ہوئی ہیں اور صرف 333 ہی صحتیاب ہوپائے ہیں۔

پاکستان میں بدہ کے روز گلگت بلتستان میں ایک نئے مریض کی اطلاع کے بعد  کورونا وائرس کے متاثرین کی تعداد 21 ہوگئی ہے۔

کراچی اب تک سب سے زیادہ متاثرہ شہر ہے، پوری ملک میں ان تمام تصدیق شدہ کیسز میں سے 15 کا تعلق کراچی سے ہے۔ باقی میں تین کیسز گلگت بلتستان میں اور ایک کیس اسلام آباد، حیدرآباد اور کوئٹہ میں رپورٹ کئے گئے ہیں۔

دوسری طرف اگر دیکھا جائے تو پاکستان میں عوامی حجوم  ہونے پر حکومت کی طرف سے لگائی گئی پابندی ایک کھوکھلا اعلان لگ رہا ہے۔ حالانکہ اس وقت پاکستان میں جاری پاکستان سپر لیگ ٹورنامنٹ جس کا اختتام 22 مارچ کو ہونا ہے جس پر کسی بھی قسم کی پابندی کا اعلان نہیں کیا گیا ہے

طبی ماہرین نے کورونا وائرس پھیلنے کے امکانات پر خطرے کی گھنٹی بجادی ہے، اسٹیڈیموں میں موجود سامعین کو اور براہ راست ناظرین کے حجوم کو روکنے کی اپیل کی گئی ہے۔ جب کہ حکومت نے اس بارے میں ابھی تک کوئی فیصلہ نہیں کیا ہے۔

آمریکہ نے آج صبح برطانیہ کے علاوہ یورپ کے تمام ممالک کے لئے اگلے 30 دن کےلئے تمام تر ہوائی پروازوں کو معطل کردیا ہے۔

دوسری جانب سعودی عرب نے بھی کورونا وائرس کی بڑہتی ہوئی وبا سے نمٹنے کےلئے احتیاطی اقدامات کے طور پر جمعرات کو پوری ملک کو بند کرنے کے اعلان کردیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق تمام تر ایئرلائنز کو اس فیصلے سے آگاہ کردیا گیا ہے، جس کے تحت عمرہ زائرین اور وزٹ ویزوں پر آنے والوں کو 72 گھنٹوں کے اندر سعودی عرب چھوڑنے کے ہدایت کی گئی ہے۔