بھارت میں کورونا وائرس کا دوسرا کیس سامنے آگیا

Health and Medicine
Coronavirus outbreak India reports second case

بھارت میں آج کرونو وائرس کا دوسرا کیس رپورٹ کیا گیا ہے۔ وزارت صحت نے تصدیق کی ہے کہ ایک شخص جو چین سے ہندستان کے شہر کیرالا آیا ہے جس میں کورونا وائرس پازیٹو پایا گیا ہے۔ جس کو ہسپتال کے اندر تنہائی میں رکھا جارہا ہے اور جس کی کڑی نگرانی کی جارہی ہے۔

اس سے قبل ، چین کی ووہان یونیورسٹی کے ایک ہندستانی طالب علم جس کا تعلق کیرالا سے تھا جس میں بھی کورونا وائرس پازیٹو پایا گیا تھا جو ہندستان میں کورونا وائرس کا پہلا کیس تھا۔ یاد رہے کہ ہندستانی حکومت نے رواں ھفتے چین سے 500 سے زائد ہندستانی شہریوں کا انخلا کیا ہے۔

وسطی چین کے صوبے ہوبی کا دارالحکومت ووہان اس وبا کا مرکز سمجھا جارہا ہے۔ پوری دنیا کے 24 ممالک میں اس خطرناک وائرس کو رپورٹ کیا گیا ہے۔ ہفتہ کے دن کے آخر تک چین میں اس ناول وائرس کی وبا سے ہلاکتوں کی تعداد 304 ہوگئی ہے۔ پوری چین میں ہفتے کے روز 2590 نئے کیسز کی تصدیق ہوئی ہے، جس سے اب تک مجموئی تعداد 14,380 ہوگئی ہے۔

یاد رہے کے ہفتے کے شروع میں عالمی ادارہ صحت (ڈبلیو ایچ او) نے کورونا وائرس پھیلنے کو ایک عالمی وبا قرار دے دیا ہے۔ ڈبلیو ایچ او کے عہدیداروں نے دنیا بھر کی حکومتوں سے بھی کہا ہے کہ اگر بیماری ان کے ممالک میں پہل جائے تو اس کو قابو پانے کےلئے تمام تر اقدامات اٹھانے کےلئے تیار رہیں۔

جب کہ دوسری طرف پاکستان سے چین آنے جانے والی تمام پروازیں 2 فروری تک معطل کردی گئی ہیں۔ اور وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر ظفر مرزا نے اعلان کیا کہ حکومت نے ڈبلیو ایچ او کے سفارشات کے مطابق چین میں پہنسے ہوئے پاکستانی شہریوں کو وطن واپس نہ لانے کا فیصلہ کیا ہے۔

مزید کہا تھا کہ اس وقت پوری چین میں اس وائرس کی وبا پہلی ہوئی ہے اگر ہم نے غیرذمہ داری سے کام لیا اور لوگوں کو نکالنا شروع کردیا تو یہ وبا جنگل کے آگ کی طرح پوری دنیا میں پہل جائے گی۔

Source:livemint.com