اب ادویات اور ڈرگ مالیکولس بنانے کےلیے آرٹیفشل انٹیلیجنس کا استعمال کیاجائے گا۔

Health and Medicine

یونیورسٹی آف نارتھ کیرولینا  کے ماہریں کی ٹیم نے مصنوئی ذھانت کا استعمال کرتے ہوئے  ایک ایسا  سسٹم بنایا ہے جو ڈرگ مالیکیولس  بنا کے   شروعات سے ادویات بنائے گا اس سسٹم کا نام رلیز (ReleaSE)  یعنی (Reinforcement learning for structural evolution) دے دیاگیا ہے۔ مصنوئی ذہانت والا یہ سسٹم  دو  نیورل نیٹورک پہ مشتمل ہوتا ہے محققین  نے  اس سسٹم کو ٹیچر نیٹورک اور اسٹوڈنٹ نیٹورک  کے نام سے متعارف کروایا ہے   جس میں ٹیچر نیٹورک کو ترتیب (syntax)  اور لسانی اصولوں (linguistic rules)  کا پتا ہوتا ہے جو تقریبا 1.7 ملیں کیمیکل اسٹکرچرز کو جانتا ہے جوڈیکوڈ (decode) کرنے کے لیے استعمال ہوتے ہیں اور اسٹوڈنٹ نیٹورک جو  ٹیچر نیٹورک کے ساتھ وقت گذارنے سے سیکھتا رہتا ہے اور ٹیچر  نیٹورک کو نیو مالیکیولس کے بارے میں  بتاتا رہتا ہے جو  نیو میڈیسن بنانے کے لیے مفید ثابت ہو سکتے ہیں۔ اگر وہ مالیکیولس   حقیقی ہیں  اور مطلوبہ نتیجہ  دینے کے قابل ہیں  تو ٹیچر نیٹورک اس کو  منظور کر لیتا ہے اگر مطلوبہ نتیجہ ملنے کے  امکانات کم ہیں تو اس  کو ٹیچر نیٹورک  رد کر دیتا ہے۔

اگر دیکھا جائے تو رلیز (ReleaSE) ایک طاقتور جدت ہے اس وقت فارماسوٹیکل کمپنیز میڈیسن بنانے کے لیے ورچیوئل اسکرینگ (Virtual screening)  کا استعمال کرتی ہے جب کہ  ورچیول اسکریننگ  صرف ان کیمیکلس کو استعمال میں لاتی ہے جو صرف پہلے سے کیمیکلس لائبریرز میں موجود ہیں لیکن رلیز کے اندر منفرد خوبی یہ ہے کہ یہ مالیکیولس کو دوبارہ سے بنانے کی صلاحیت رکہتا ہے۔

بنانے والی ٹیم کا کہنا ہے کہ ورچیول اسکرینگ(Virtual screening)  کو اگر دیکھا جائے تو ایسا ہے کہ جیسے گاہک کسی ریسٹورینٹ  میں کسی چیز کا آرڈر کرتا ہے اور آرڈر وہی ہوگا جو اس ریسٹورینٹ کے مینیو میں ہوگا۔ لیکن اگر رلیز(ReleaSE) کے اندر دیکھا جائے تو اس میں گاہک کے لیے ایک  گروسری اسٹور اور ایک باورچی بھی ساتھ میں دے دیا گیا ہے اب گاہک کی مرضی ہے جو چاہے آرڈر کرواکے بنوا سکتا ہے اس سسٹم کا استعمال کرتے ہوئے مخصوص خصوصیات  کے مالیکیولس بنائے جا سکتے ہیں جیسے سیفٹی پروفائلس(safety profiles)، مطلوبہ بایوایکٹیوٹی (desired bioactivity)، اپنی مرضی کے مطابق مادی خصوصیات (customized physical properties) جس میں پگھلنے والے نقطے (melting point) اور پانی کے حل ہونےکی خصوصیت (solubility of water) کو اپنی مرضی پہ رکھا جا سکتا ہے۔