حکومت سندہ نےتھرکول سے 1320 میگاواٹ بجلی بنانےکے لئے 1301 ملین ڈالر کی سرمایہ کاری حاصل کرلی ہے۔

Pakistan

وزیر اعلی سندھ سید مراد علی شاہ نے کہا ہے کہ ان کی حکومت نے تھر میں کوئلےکے بلاک I میں 1320 میگاواٹ کے پاور پلانٹ کی تنصیب اور 660 میگاواٹ کے ایک اور پاور پلانٹ کی تیاری اور جب کہ بلاک II کی توسیع کے لئے کام شروع کردیا  ہے۔

اس مالی پروجیکٹ  کے تحت تھرکول سے 1980 میگاواٹ بجلی پیدا کرنے اور 10.6 MTPA ایم ٹی پی اے کی پیداوار کےلئے دو کوئلے کی کانوں کی کہدائی کے لئے 1301 ملین ڈالر کی سرمایہ کاری کی جائے گی۔

کانفرنس میں وزیر توانائی امتیاز شیخ ، سی ایم  کے مشیر مرتضی وہاب ، پی ایس سی ایم ساجد جمال ابڑو ، سکریٹری برائے توانائی مصدق خان ، ایم ڈی تھر کول اور انرجی بورڈ طارق شاہ ، SECMC کے صدر غیاث خان ، SECMC کے سی ای او ابوالفضل رضوی ، سائنو سندہ رسورس لمیٹڈ (ایس ایس آر ایل) کے ڈائریکٹر لی جیگن ، ایس ایس آر ایل کے ڈپٹی سی ای او ہوانگ جنٹنگ ، ایس ایس آر ایل کے ڈپٹی ہیڈ (فنانس) لی ہانگٹو ، ایس ایس آر ایل کے ڈپٹی سی ای او (صنعتی) جانگ ہانگپینگ اور دیگرشامل تھے۔

واضح رہے کہ چین کی ایک کمپنی ، سائنو سندھ ریسورسز لمیٹڈ نے تھر کول فیلڈ کے بلاک 1 میں سالانہ 7.8 ملین ٹن (ایم ٹی پی اے) کوئلے کی کان کی کہدائی کے لئے 1060 ملین ڈالر کی مالیت لگارہی  ہے۔  اور اس کان سے نکلنے والے  کوئلے سے 1320 میگاواٹ بجلی بنے  گی جو براہ راست 2 بلین ڈالر کی سرمایہ کاری لائے گی۔

تھر کوئلہ بلاک II میں سندھ اینگرو کول مائن کمپنی (ایس ای سی ایم سی) کے پہلے مرحلے کے کان  میں توسیع کرکے 3.8MTPA  کی پیداوار کے ساتھ 215 ملین ڈالر مالیت لگائی جائے گی ، اس طرح سے دونوں مراحل کے تحت 7.6 ایم ٹی پی اے پہنچ جائے گا۔ . اس کے پہلے مرحلے کے تحت پہلے ہی 660 میگاواٹ بجلی پیدا کی جا رہی ہے۔ دوسرے مرحلے میں مزید 1 بلین کی بیرونی سرمایہ کاری کے ساتھ 660 میگاواٹ بجلی پیدا ہوگی۔

یہاں یہ بتانا ضروری ہے کہ سندھ حکومت ایس ای سی ایم سی(SECMC) کے 55 فیصد حصص کی مالک ہے جبکہ اینگرو کے 12 فیصد ، تھل لمیٹڈ کے 12 فیصد ، ایچھ بی ایل کے 9.5 فیصد  اور دو دیگر شراکت دار بھی ہیں۔

وزیراعلیٰ نے تھر میں منصوبوں کی مالی اعانت کے لئے سی پیک فریم ورک کی حمایت کا اعتراف کیا۔ اور بتایا کہ  ہر 3.8 MTPA کی  کان پہ صوبہ سندھ کو کوئلے کے ٹیرف کے طور پر سالانہ تقریبا 20 ملین ڈالر کی رائلٹی ملتی ہے اور یہ  رقم تھر کے عوام کی سماجی اور معاشی ترقی پر خرچ کی جارہی ہے۔

وزیراعلیٰ نے کہا کہ تھرکے کوئلے کی قیمت تیزی سے مسابقانہ بنتی جارہی ہے اور مستقبل قریب میں تھر کے کوئلے کے بلاک VI سے لیکوئڈز (ڈیزل) ، انڈر گرائونڈ گیسیفکیشن اور کہاد بنانے کے لئے کلین کول ٹکنالوجیز کو لگایا جائے گا ۔