بگ بینگ کے بعد سب سے بڑا ہونے والا دہماکہ جس کو زمین سے بھی دیکھا گیا۔

Space
Gamma rays explosions

کائنات میں گاما ریز کا پہٹنا اس وقت تک کے سب سے طاقتور دہماکوں میں سے ایک ہیں، یہ دہماکے ایک سیکنڈ سے لیکر کئی منٹ کے عرصے تک رہتے ہیں اور ایک ہی طاقت سے گاما ریز کا اخراج ہوتا رہتا ہے اور اس کی شدت اتنی ہوتی ہے جیسے کائنات کے سارے ستارے ملکر روشنی کا اخراج کر رہے ہیں۔

اس بہت بڑے کوسموس کے واقعے کو جنوری میں ناسا کے دو سیٹلائیٹس نے 4 بلین نوری سال سے زیادہ دور کہکشان میں پتا لگایا اور اس کے 22 سیکنڈ کے اندر نیل گیرلز سوئفٹ آبزرویٹری اور فرامی گاما ریز خلائی دوربین کو اس دہماکے کی فوٹیج لینے کےلیے سیٹ کیا گیا تھا اور 27 سیکنڈ کے اندر کینری جزیرے میں ماہرین فلکیات نے ان کوآریڈینیٹس پہ دو اہم دوربینیوں کو اس نقطہ پہ موڑ دیا اور فوٹیج لینے میں کامیاب ہوگئے۔

ماہرین فلکیات کا خیال ہے کہ گاما ریز کا پہٹنا اور اس طرح کی بہت بڑی مقدار میں توانائی کا اخراج دو ستاروں کے ٹکراؤ یا سپر نووا واقعات سے ہوتے ہیں جس میں اکثر ستارے اپنی گریوٹی کہو جاتے ہیں اور بلیک ہول میں گر جاتے ہیں۔

ہبل کے مشاہدے سے پتا چلتا ہے کہ اس قسم کے گاما ریز کا ایکسپلوزن 4 بلین لائیٹ ییئر کے فاصلے پہ ہوا ہے جو اسپیس کی بہت زیادہ گنجان جگہ ہے جس کو ماسو نیوکلیئر گلیکسی بھی کہا جاتا ہے۔ اور یہ ایک غیر معمولی واقع تھا اس وجہ سے پیدا ہونی والی روشنی سورج کی روشنی سے ایک سئو گنا زیادہ تھی جب کہ گاما ریز کا پہٹنا بغیر کسی وارنگ کے دکھائی دیتا ہے اور چند سیکنڈ سے لیکر کچھ منٹوں تک جاری رہ سکتا ہے۔