ناسا نے رسرچ کا سامان چاند پہ بھیجنے کا اعلان کردیا

Space

واشنگٹن ڈی سی : آمریکی اسپیس کمپنی ناسا نے روبوٹک لئنار لینڈرس(Robotic Lunar Landers) بنانے والی تین کمپنیوں کے ساتھ چاند پہ کارگو لے جانے کا سودا کر دیا ہے جو چاند تک سائنس اور رسرچ کا سامان لے کے جائیں گے۔ جس مین Astrobotic, Orbitbeyond  اور Pittsbrug نامی کمپنیاں شامل ہیں جو اگلے چند سالوں میں اپنا مشن مکمل کریں گی۔

ان کارگو میں چاند کی سرفیس ناپنے ، چاند کی ریڈیئیشن لیول معلوم کرنے، اور بھی بہت ساری سائنسی تحقیق کرنے والے ڈوائیسز کو بھیجا جائے گا اور اس کے علاوہ دیکھا جائے گا کہ انسان کے چاند پہ مصروفیات کیسے اثرانداز ہونگی جو 2024 تک انسان کا چاند پہ جانے کے راستے ہموار کرے گی۔

ناسا اوردوسری اسپیس کمپنیز چاہتی ہیں کہ چاند پہ ایک  اسٹیشن بنائے جائے جو دوسرے  گرھوں پر جانے کے لیے  ایک اسٹیشن کا کام دے۔

مثال کے طور پر اگر انسان کسی اور سیارے تک جانا چاہتا ہے تو پہلے چاند پر جائے وہان پر ایک دو دن رکے پھر وہان سے ہی دوسری منزل تک جائے۔  جس میں بڑے پیمانے پر انفراسٹکچر اور ٹیکنالاجی کی ضرورت ہو گی جیسے چاند کی سطح میں موجودہ برف کو راکیٹ کی ایندھن میں تبدیل کیا جائے اور اس کے علاوہ چاند پر اور بھی قیمتی وسائل موجود ہیں جس کو مختلف کاموں کے لیے استعمال کیا جا سکتا ہے اور چاند کو کمرشل سرگرمیوں کا حب بنایا جا سکتا ہے۔