سلیکان کا وقت گیا اب پلاسٹک سے سولر پینل بنائے جائیں گے۔

Technology

بیجنگ : چینی سائنسدانوں  نے  ایسے سولر پینل بنانے کا اعلان کیا ہے  جو  نامیاتی  مادی سے بنائے گئے ہیں۔ جس کو نامیاتی سولر سیل (Organic Solar Cell) یا پلاسٹک سولر سیل  (Plastic Solar Cell)  کہا جاتا ہے ۔ اس وقت شمشی توانائی (solar energy)  سلیکان کی بنی ہوئی پاور پلیٹس  سے حاصل کی جاتی ہے جو پلاسٹک سولر  سے کہیں زیادہ مہنگی ہے۔

چینی محققین نے  ایسے  نئی نسل کے  سولر سیل  کو متعارف کروایا ہے  جس کو کاربان اور پلاسٹک سے بنایا گیا ہے۔  اس وقت  سولر پینل کی بناوٹ  سلیکان سے کی جاتی ہے  اور اس کو  سولر انرجی کو  بجلی   میں تبدیل کرنے کے لیے بہت ہی مفید سمجھا جاتا ہے۔ لیکن اب کاربان اور پلاسٹک  کے بنے ہوئے   نامیاتی سولر پینل سے  بجلی حاصل کی جائے گی جو بجلی بنانے کے لیے بہت ہی  سستا راستہ ہوگا ۔

اس نامیاتی مادی کو آرگینک فوٹووولٹیکس (Organic photovoltaics) کہا جاتا ہے جس کو  سیاہی کے ساتھ ملاکے کسی بھی  جگہ پہ پرنٹ کیا جا سکتا ہے۔  جیسے  کھڑکیوں، خمدار بناوٹوں (Curve Structures) اور کپڑوں  پہ بھی پرنٹ کر سکتے ہیں ۔ اس وقت سلیکان سیل 15 فیصد سے 22 فیصد بجلی کی تبدیلی کی شرع (Power conversion rate) پہ چلتے ہوئے  سولر انرجی کو  بجلی  میں تبدیل کرتا ہے۔

جب کہ نامیاتی سولر سیل بنانے والی ٹیم کا کہنا ہے کہ  وہ اس سیل کا استعمال کرتے ہوہے  15 فیصد سے 17 فیصد بجلی کی تبدیلی کی شرع (Power conversion rate) پہ  سولر انرجی کو بجلی میں تبدیل کر سکتے ہیں اور مزید کہنا ہے کہ  اس کو 25 فیصد تک لے جانے کی کوشش کررہے ہیں۔

اگر دیکھا جائے تو نامیاتی سولر سیل  گریں انرجی کے لیے  مناسب انتخاب ہے اس کے علاوہ یہ بہت ہی سستا  ذریعہ ہے بنانے والی ٹیم کا کہنا ہے کہ آنے والے دہائی  میں اس کے استعمال سے  انرجی سیکٹر میں بہت بڑی تبدیلی آئے گی۔