ڈرائیور اور ڈرائیور کیبن کے بغیر خودکار چلنے والا ٹرک

Technology

اسٹاک ہوم : دنیا میں پہلی بار ڈرائیور کیبن اور ڈرائیور کے بغیر سلیف ڈرائیونگ ٹرک کو سئیڈن کے ایک پبلک روڈ پہ ٹیسٹ کیا گیا ہے۔ جس کو سئیڈس اسٹارٹ اپ انرائیڈ (Einride) نے بنایا ہے۔

دنیا میں پہلی بار ڈرائیور کے بغیر مکمل طور پر خودکار طریقے سے چلنے والے ٹرک کو عام روڈ پر چلنے کی اجازت دی گئی ہے۔

اس ٹرک کی ایک آپریٹر کی طرف سے دور بیٹھ کر (remotely) نگرانی کی جاتی ہے جوضرورت پڑنے پر رموٹلی کنٹرول سنبھال سکتا ہے جب کہ اس سے پہلے دیگر کمپنیوں نے پبلک روڈ پر خودکار گاڑیوں کا ٹیسٹ کرنے کے لیے ڈرائیور بھی ساتھ بٹھا رکھے تھے۔

26 ٹن وزن اٹھانے والا ٹرک کیمرے ، ریڈارس اور 3D سنیسرز کے ساتھ لیس ہے جو اس ٹرک کے اردگرد 360 ڈگری ایریا کو مانیٹر کرسکتے ہیں۔

ٹرک بنانے والی کمپنی (آئن رائیڈ)Einride ایک دوسری کمپنی این وی ڈی ای (NVDA) کا آٹونومس ڈرائیونگ پلیٹفارم استعمال کرتی ہے اور اس کے سسٹم کو 5G نیٹورک کے ساتھ منسلک کیا گیاہے۔

ایک لاجسٹک رسرچ کمپنی کے مطابق ، آمریکی ٹرکنگ ایسوسئیشن نے کہا ہے کہ US میں ٹرانسپورٹ کمپنیوں کو تقریبا ساٹھ ھزار اضافی ڈرائیورس کی ضرورت ہے جب کہ یورپ میں ایک لاکھ پچاس ھزار ٹرک ڈرائیورس کی پوزیشنز خالی پڑی ہیں فیوچر میں اس کمی کو پورا کرنے کےلیے خودکار چلنے والی گاڑیوں کا استعمال بڑہ رہا ہے۔