سموگ فری ٹاور

Technology

بیجنگ : چونکہ اونیسویں صدی  میں صنعتی انقلاب کے آغاز سے ماحولیاتی آلودگی میں اضافہ ہوا ہے ، ہوا ، پانی، زمیں بلکہ پورے ایکوسسٹم کو متاثر کردیا ہے، گذشتہ ایک دہائی سے ماحولیاتی آلودگی نے دنیا کے پورے ماحولیاتی نظام کو پیچیدہ بنا دیا ہے۔ بڑی بڑی فیکٹریز ، گاڑیوں اور کول پاور پلانٹس سے نکلنے والے دونھے کی وجہ سے دنیا بھر کے اکثر بڑے بڑے شہر  سموگ کے لپیٹ میں رہتے ہیں، فضائی آلودگی سے ہر سال سات ملیں وقت سے پہلے اموات ہو رہی ہیں، جس کا تعداد ہر سال بڑہ رہا ہے ، آمریکامیں ہر سال  ساٹھ ہزار اموات فضائی آلودگی کی وجہ سے ہوتی ہیں۔ یہاں تک کے عالمی ادارہ صحت نے کچھ شہروں کی ھوائی آلودگی کو بہت ہی خطرناک قرار دے دیا ہے جس میں چائنا کا بیجنگ شہر سرفھرست ہے۔

ان حالات کے دیکھتے ہوئے ڈچ ڈزائنر ڈان روسیگارڈ (Daan Roosegaarde) اور ماھریں کی ٹیم نے مل کے دنیا کا پہلا سموگ ویکیوم کلینر  (Smog Vacuum Cleaner) بنایا ہے جو سات میٹر اونچا ہے جس کو الیومینیم سے بنایا گیا ہے اور پیٹنٹیڈ پازیٹو آئنائیزیشن ٹیکنالاجی (Patented positive ionization technology) کو استعمال کرتا ہے جو آلودگی کو کم کرکے بڑے بڑے شہروں کو صاف اور ماحول دوست بناتا ہے ۔پرانے زمانے میں مصنوئی بارش (Cloud seeding)  کے ذریعے بارش کرواکے  ماحول کو سموگ سے پاک کیا جاتا تھا لیکن اب اس کا حل آئیونائیزیشن ٹیکنالاجی سے نکال دیا گیا ہے۔

اس سموگ فری ٹاور کو پازیٹو کرنٹ دے کے  ایک الیکٹروڈ سے  پازیٹو آئنس کو ماحول میں بہیجا جاتا ہے اور آئن اپنے ساتھ مٹی کے ذرات کو منسلک کرلیتے ہیں اور پھر نیگیٹو الیکٹروڈ کو چارج کیا جاتا ہے تاکہ ماحول میں چھوڑے جانے والے مثبت چارج کے پارٹیکلس جو اب ماحول کی آلودگی سے بھرے ہوئے ہونگے اس کو نیگیٹو الیکٹروڈ اپنی طرف کھینچتا ہے  اور پھر ان آلودہ پارٹیکلس کو  صاف کرکے سموگ فری ھوا کو ٹاور کے نچلے حصے سے باہر نکال دیا جاتا ہے ، نیگیٹو الیکٹروڈ کو وقتن بہ وقتن صاف کرنا پڑتا ہے ۔

 بنانے والی ٹیم کا کہنا ہے کہ یہ ٹاور 1 ملیں کیوبک فٹ ھوا کو ایک گھنٹے میں صاف کرنی کی صلاحیت رکھتا ہے، اور واٹر بوائلر سے بھی کم بجلی پہ چلتا ہے۔ حال ہی میں اس پروجیکٹ کو چائنا ، پولینڈ  اور نیدھرلیند کے اندر انسٹال کیا گیا ہے