شمسی توانائی سے چلنے والے تیرتے فارمز ہرروز 20 ٹن سبزیاں تیار کرتے ہیں

Technology
Solar-Powered Floating Farms

جیسا کہ روایتی کاشتکاری میں چیلینجز دن بہ دن بڑہ رہے ہیں جن کا اب جدید اور پائیدار طریقے سے حل نکالا گیا ہے۔ اس کی ایک مثال تیرتے ہوئے جزیرے کی ہے جو شمسی توانائی سے چلتا ہے جس کے اندر بہت سارے فارم بنائےگئے ہیں جو فارورڈ سوچنگ آرکیٹیکچر نامی ایک کمپنی نے بنایا ہے۔

اس جزیرے کو توانائی کے موثر انداز میں کام کرنے کےلئے ڈزائن کیا گیا ہے جہاں بارش کے پانی اور سورج کی روشنی سے فصل تیار ہوتا ہے، ان فارموں کو ہردن 20 ٹن مقدار میں سبزیاں تیار کرنے کےلئے ڈزائن کیا گیا ہے۔

اس نئے طریقے کا فائدہ یہ ہے کہ اس نے پوری دنیا میں اس طرح کے فارموں کی تیاری اور چلانے کی راہ ہموار کردی ہے ، یہ نقطہ نظر ان جگہوں کےلئے زیادہ فائدیمند ہوگا جہاں پر کاشتکاری کےلئے موزوں وسائل موجود نہیں ہیں۔ اور ایسے جگہوں پر رہنے والے مقامی افراد اپنی ضرورت کی خوراک کو بڑہا سکتے ہیں جس کو باہر کسی دوسری جگہ سے منگوایا جاتا ہے۔ ماھرین کا خیال ہے کہ مستقبل میں یہ طریقہ یقینا کھانے پینے کی پیداوار میں کسی انقلاب سے کم نہیں ہوگا اور بہت سارے ایسے ممالک کی ضروریات کو پورا کرے گا جو کاشتکاری کےلئے موزون وسائل نہ ہونے جیسے مسائل سے دوچار ہیں۔

یہ ڈزائن عملی طور پر خودکار طریقے سے چلتا ہے اور سال بھر چلتے رہنے کےلئے اس میں انسانی مداخلت کی ضرورت نہیں ہوگی، ان فارمس میں کس قسم کی پیداوار ہوگی اس کا منحصر اس مخصوص خطے کی ضرورت پہ ہوتا ہے لیکن اس تیرتے جزیرے کو بنانے والی کمپنی نے ان فارمز میں پیدا ہونے والے ممکنہ فصلوں کا ایک چارٹ بنایا ہے جس کے اندر ان تمام تر چیزوں کو دیکھا جاسکتا ہے۔

Solar-Powered Floating Farm products

یہ یونٹ تین حصوں پر مشتمل ہے اس میں پہلا چھت والا حصہ فوٹووولٹک پاور پلانٹ ہے جس میں اسکائی لائیٹس، شمسی پینل، بارش کا پانی جمع کرنے والے حصے، ونڈ ٹربائنز اور ویو انرجی کنورٹر سسٹم شامل ہے۔ درمیانی حصے میں گرین ہائوس موجود ہوتا ہے جو فصلوں کی کاشت کےلئے خودگار ہائڈروپونک اور مائکروکلائیمیٹ کنٹرول کے ساتھ مکمل ہوتا ہے۔ جب کہ نچھلے حصے میں مچھلیوں کا فارم ، ذبع خانہ، لہروں کی رکاوٹیں توڑنے والا پینل اور ایک ڈیسیلینیشن پلانٹ کی سہولیت موجود ہوتی ہے۔

Source: icreativeD