آمریکی سائنسدانوں نے ایک ایسا نینو ڈوائیس تیار کیا ہے جو کووڈ-19 کے مریضوں کی بلڈ آکسیجن لیول اور درجہ حرارت رکارڈ کرسکتا ہے

Technology
stamp-sized wearable device

آمریکی سائنسدانوں کی ٹیم نے اسٹیمپ سائز جتنا ایک ڈوائیس تیار کیا ہے جس میں بہت سارے سینسر شامل ہیں، جو کورونا وائرس کے ابتدائی علامات کو پکڑنے اور بیماری میں متاثرہ مریضوں کی نگرانی کےلئے استعمال کیا جاتا ہے۔

سائنس ایڈوانسس جرنل میں شایع ہونے والے ایک اداریے کے مطابق یہ اسٹیکر نما طبی آلہ، جو ڈاک ٹکٹ کی جسامت جتنا ہوتا ہے، جو بلکل نرم ، لچیکدار اور اس کو گلے کے تھوڑا نیچے لگایا جاتا ہے۔

ماھرین کے مطابق گلے کا یہ حصہ سانس کی نگرانی کےلئے ایک مثالی جگہ ہے ۔

یہ آلہ وائرلیس ہے جوجلد کے اوپر چھوٹی چھوٹی وائیبریشنس کو مانیٹر کرتا ہے اور درجہ حرارت دیکھنے کے لئے بھی استعمال کیا جاتا ہے۔

جب متاثر شخص کھانسی کرتا ہے اور سانس لیتا ہے تو اس کھانسنے کو بھی گنا جاتا ہے، یہ آلہ کھانسی کی شدت پر نظر رکھتا ہے اور سانس لینے میں تکلیف کو بھی نگرانی کرتا ہے۔

حلق کیروٹائڈ شریان کے بلکل قریب ہے اس وجہ سے یہ آلہ خون کے بہاؤ اور ہرٹ ریٹ کو بھی مانیٹر کرتا ہے۔

ماھرین کا خیال ہے کہ اس ڈوائیس میں خود سیکھنے والے الگورتھم وقت گذرنے سے ہوشیار ہوجائیں گے۔ جس سے جلد سانس کی  بیماریوں کا پتا لگانے میں آسانی ہوجائے گی ۔