ایک ایسا پیچ جو سردیوں میں ہیٹر اور گرمیوں میں ائیرکنڈیشن کا کام کرے گا۔

Technology

سانتیاگو : سردیوں میں گرم کپڑے پہن کر اپنے آپ کو گرم تو رکھا جا سکتا ہے لیکن گرم موسم میں کہیں سفر کرتے ہوئے کھلے آسمان میں اپنے آپ کو ٹھنڈا رکھنا کافی مشکل تھا لیکن اب یونیورسٹی آف کیلیفورنیا سانتیاگو کے انجنیئرس کی ٹیم نے ایک ایسا پہننے والا پیچ بنایا ہے جو گھر، آفیس اور سفر میں پرسنل کولنگ اور گرمی فراہم کر سکتا ہے۔ یہ نرم، اسٹریچی پیچ پہننے والے انسان کو آرامدہ اور پرسکون بناتا ہے پھر چاہے موسم سردی کی ہو یا گرمی کی، موسم کے حساب سے درجہ حرارت کو تبدیل کرنے کی خاصیت رکھتا ہے۔

اس پیچ کو چارج کرنے کےلیے ایک لچکدار، اسٹریچئیبل بیٹری کو کپڑے کے ساتھ لگایا گیا ہے۔ ماھریں کا کہنا ہے کہ اس کو پہنے سے گرمی میں ٹھنڈک اور سردی میں گرمائش دینے کےلیے زیادہ توانائی کو بچانے میں مدد ملے گی۔

اس قسم کا پیچ آپ کی ذاتی تھرمل کمفارٹ کو بھتر بنانے مین مدد کرتا ہے پھر چاہے آپ گرم دن میں کام کررہے ہو یا سردیوں میں دفتر میں بہت ٹھنڈک محسوس کررہے ہو۔

اس وقت مارکیٹ میں پرسنل کولنگ اور ھیٹنگ کےلیے الگ الگ اقسام کے ڈوائسز موجود ہیں لیکن وہ پہننے اور باہر لے جانے کےلیے آسان نہیں ہے ان میں کچھ ڈوائیس چھوٹے پنکھے کا استعمال کرتے ہیں جب کہ کچھ پانی کے ساتھ بھر دیے جاتے ہیں۔

یہ دنیا کا پہلا ایسا ڈوائیس ہے جو پہننے میں آرامدہ اور پرسکون ، ہلکا اور کپڑوں میں آسانی سے ضم کیا جا سکتا ہے۔