گلاب کا گل سمندر کے کڑوے پانی کو پینے کے لائق بنائے گا۔

Science

آسٹن ٹیکساس : یونیورسٹی آف آسٹن ٹیکساس کے محققین نے  گلاب کے گل نما ایک ایسا ڈوائیس بنایا ہے جو سمندر جیسے کڑوے پانی کو فلٹر کرکے میٹھا اور صاف پانی الگ کرتا ہے۔

اس ڈوائیس کی قیمت 2 سینٹس سے بھی کم کی بتائی جا رہی ہے جو ایک اسکوائر میٹر میں آدہے گیلن سے زیادہ پانی پرتی گھنٹے سے پیدا کر سکتا ہے۔

گلاب کا گل جس کوبہت سارے کلچرس میں محبت کی علامت سمجھا جاتا ہے لیکن اب پھول نہ صرف محبت کی علامت ہو گا بلکہ صاف پانے حاصل کرنے کے لیے استعمال کیا جائے گا۔

یہ ڈوائیس ایک ٹیوب کے مدد سے کڑوے پانی کو اندر کی طرف لیتا ہے۔ اور پھر پانی ڈوائیس میں اندر داخل ہوتے ہی ان پھول کے پتوں کے اوپر اپنا راستہ خد لے لیتا ہے اور ان پھول کی پتوں کے اوپر لگایا ہوا Polypyrrole material(پولیپرول) پانی کو بھاپ(steam) میں تبدیل کرتا ہے اور یہاں پر پانی کے خراب مادوں کو الگ کیا جاتا ہے۔ یہ سولر اسٹریمنگ والا طریقا سمندر والے کڑوے پانی جس میں نمکین مادے اور بیکٹریا پائے جاتے ہیں ان کو الگ کرکے پانی کو صاف کرتا ہے اور پینے کے لائق بناتا ہے۔