نیا ٹیکسٹائل جو گرمی میں ٹھنڈا اورسردی میں گرم رکھ سکتا ہے

Science
New textile could keep you cool in the heat, warm in the cold

ایک ایسا لباس جو موسم کے تبدیل ہونے کے مطابق ڈہل سکتا ہے، جو پہننے والے کو دوپہر کی گرمی میں ٹھنڈک دیتا ہے لیکن شام کے وقت مزید ٹھنڈک پڑنے کی صورت میں گرم بھی ہوجاتا ہے۔

اس طرح کے لباس کو باہر پہننے کے علاوہ ، گھر کے اندر بھی پہنا جا سکتا ہے جس سے ایئرکنڈینشنگ کے استعمال میں کمی  یا گرمی میں کمی کو محسوس کیا جاسکتا ہے۔

اس مضبوط، آرامدہ اور پرسکون فیبرک بنانے کےلئے ای سی ایس اپلائیڈ مٹریئلس اینڈ انٹرفیسز کے محققین نے اپنا کام سرانجام دیا ہے جو بغیر توانائی کے جلد کو گرم اور ٹھنڈا رکھ سکتا ہے۔

متعلقہ خبر: ایک ایسا پیچ جو سردیوں میں ہیٹر اور گرمیوں میں ائیرکنڈیشن کا کام کرے گا۔

سمارٹ ٹیکسٹائل جو پہننے والوں کو گرم اور ٹھنڈا کرسکے یہ کوئی نئی بات نہیں ہے لیکن ایک ہی وقت میں دونوں کام یعنی گرمی اور ٹھنڈک نہیں دے سکتا تھا۔ اس کے علاوہ ان ٹیکسٹائل میں دوسری خرابیاں بھی موجود ہیں یعنی وہ بڑا، بھاری ، نازک اور مہنگا بھی ہوسکتا ہے جب کہ بہت ساروں میں تو بیرونی پاور کی بھی ضرورت ہوتی ہے۔

بنانے والی ٹیم کے میمبر گوانگنگ تاؤ کے مطابق وہ  اس طرح کا تھرمل مینیجمنٹ ٹیکسٹائل بنانا چاہتے تھے جس میں یہ تمام تر خامیوں کو کم کیا جا سکے۔

اس ٹیکسٹائل کو بنانے کےلئے محققین نے ریشم اور چیتوسن (Chitosan) کا استعمال کرتے ہوئے پوئرس مائکرواسٹرکچر والا مرحلیوار تبدیل ہونے والا پولیمر تیار کیا ہے جو گرمی کو جذب کرنے اور چھوڑنے کی خصوصیت رکھتا ہے۔

جب دستانے پہنے کسی شخص نے اپنا ہاتھ گرم چیمبر (F 122) میں رکھے تو یہ فیبرک ماحول سے گرمی جذب کرتا ہے اور مائل میں پگھل جاتا ہے اور پیچ کے نیچے جلد کو ٹھنڈا کرتا ہے۔

پھر جب دستانے والا ہاتھ ٹھنڈے (F 50) میں چلا جاتا ہے تو یہ فیبرک ٹھوس ہوکر گرمی کو جاری کرتا ہے اور جلد کو گرم رکھتا ہے، محققین کا خیال ہے کہ فیبرک بنانے کا یہ عمل موجودہ ٹیکسٹائل انڈسٹری کے ساتھ مطابقت رکھتا ہے اس وجہ سے اس عمل کا استعمال کرتے ہوئے بڑے پیمانے پر اس فیبرک کی پیداوار کو بڑہایا جاسکتا ہے۔

Source: .acs.org